صوابی میں پی ٹی آئی اور اے این پی کے کارکنان میں فائرنگ، پی ٹی آئی کے کارکن جاں بحق ، چار زخمی

 

ضلع صوابی کے حلقہ این اے 19 میں فائرنگ ہوئی۔ میڈیا  رپورٹ کے مطابق فائرنگ اے این پی  اور  پی ٹی آئی کے کارکنان کے مابین ہوئی۔ فائرنگ کا واقعہ صوابی کے علاقہ کرنل شیر خان کلے میں پیش آیا جس کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق جبکہ 4 افراد زخمی ہوئے۔ جاں بحق شخص پی ٹی آئی کا کارکن تھا۔

دوسری جانب این اے 19 صوابی میں خواتین کو ووٹ ڈالنے سے بھی روک دیا گیا ہے۔میڈیا ذرائع کے مطابق خواتین کو ووٹ ڈالنےسے مقامی لاگوں نے روکا ہے۔ این اے 19 صوابی سے پاکستان تحریک انصاف کے اُمیدوار انجینئیر عثمان خان ترکئی جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما وارث خان مد مقابل ہیں۔ علاوہ ازیں ہنگو کے حلقہ این اے 133 میں بھی تاحال کسی خاتون نے ووٹ کاسٹ نہیں کیا۔ہنگو کے علاقہ کار  نریاب کے علاقوں میں تاحال کسی خاتون نے بھی ووٹ  نہیں ڈالا ہے۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ پولنگ کے دن خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے والوں کے لیے سزا کا اعلان کیا جا چکا ہے۔ اس ضمن میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے ایک حکم نامہ بھی جاری کیا گیا۔

چیف الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کیے گئے حکم نامے کے مطابق کہا گیا کہ خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے کی کسی بھی کوشش کو سختی سے روکا جائے گا۔ خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے پر تین سال تک قید کی سزا ہونے کا امکان ہے۔

یاد رہے کہ عام انتخابات 2018ء کے پیش نظر ملک بھر میں پولنگ کا عمل صبح 8 بجے سے شروع ہو چکا ہے شام 6 بجے تک بلا تعطل جاری رہے گا۔۔ ملک بھر سے آج 10 کروڑ 59 لاکھ 55 ہزار 409 ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے۔آج قومی اسمبلی کے 272 میں سے 270 حلقوں جب کہ صوبائی اسمبلیوں کے 577 میں سے 570 حلقوں کے لیے پولنگ ہو گی اور ووٹرز اپنے پسندیدہ اُمیدوار کو ووٹ دیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *